بہت سے راستوں میں تو نے جو رستہ چنا تھا

محمد اظہار الحق

بہت سے راستوں میں تو نے جو رستہ چنا تھا

محمد اظہار الحق

MORE BYمحمد اظہار الحق

    بہت سے راستوں میں تو نے جو رستہ چنا تھا

    فرشتے آج تک حیرت میں ہیں کیسا چنا تھا

    بہت سے شہر رہنے کے لیے حاضر تھے لیکن

    ہمیشہ زندہ رہنے کے لیے صحرا چنا تھا

    جو پیچھے آ رہے تھے ان سے تو غافل نہیں تھا

    کہ تو نے راستے کا ایک اک کانٹا چنا تھا

    جہاں میں کون تھا دوش نبی جس کا تھا مرکب

    اسی خاطر برہنہ پائی نے تجھ سا چنا تھا

    زمانہ جانتا ہے کون تھا جو پار اترا

    کہ تو نے پیاس اور دربار نے دریا چنا تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY