بیٹھا ہوں پاؤں توڑ کے تدبیر دیکھنا

یگانہ چنگیزی

بیٹھا ہوں پاؤں توڑ کے تدبیر دیکھنا

یگانہ چنگیزی

MORE BY یگانہ چنگیزی

    بیٹھا ہوں پاؤں توڑ کے تدبیر دیکھنا

    منزل قدم سے لپٹی ہے تقدیر دیکھنا

    آوازے مجھ پہ کستے ہیں پھر بندگان عشق

    پڑ جائے پھر نہ پاؤں میں زنجیر دیکھنا

    مردوں سے شرط باندھ کے سوئی ہے اپنی موت

    ہاں دیکھنا ذرا فلک پیر دیکھنا

    ہوش اڑ نہ جائیں صنعت بہزاد دیکھ کر

    آئینہ رکھ کے سامنے تصویر دیکھنا

    پروانے کر چکے تھے سرانجام خودکشی

    فانوس آڑے آ گیا تقدیر دیکھنا

    شاید خدانخواستہ آنکھیں دغا کریں

    اچھا نہیں نوشتۂ تقدیر دیکھنا

    باد مراد چل چکی لنگر اٹھاؤ یاسؔ

    پھر آگے بڑھ کے خوبیٔ تقدیر دیکھنا

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    بیٹھا ہوں پاؤں توڑ کے تدبیر دیکھنا فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY