Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

بیٹھے بیٹھے مسکرا دی خود ہی گھبرائی کبھی

رشیدہ عیاں

بیٹھے بیٹھے مسکرا دی خود ہی گھبرائی کبھی

رشیدہ عیاں

MORE BYرشیدہ عیاں

    بیٹھے بیٹھے مسکرا دی خود ہی گھبرائی کبھی

    پیار کے موسم میں ایسی بھی گھڑی آئی کبھی

    آپ کا دامن تو ساحل ریت کا ثابت ہوا

    موج اشک خوں بھی جس کو تر نہ کر پائی کبھی

    اپنے سر لے کر زمانے بھر کی ساری تہمتیں

    دفن کر دی اپنی خاموشی میں گویائی کبھی

    ساتھ گزرے چند لمحوں کی سنہری یاد سے

    چلنے لگتی ہے مرے سانسوں میں پروائی کبھی

    زندگی بھر آپ اپنے آئنے میں گم رہے

    شخصیت یا شکل میری بھی نظر آئی کبھی

    چھوڑیئے یہ تو ہمارے پیار کا ہے معجزہ

    دور اب سے آپ بھی ہوتے تھے ہرجائی کبھی

    اک کرن ہی چاند کی بن کر میں ہو جاتی نثار

    آرزو لیکن عیاںؔ اپنی نہ بر آئی کبھی

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے