بر طرف کر کے تکلف اک طرف ہو جائیے

جاوید صبا

بر طرف کر کے تکلف اک طرف ہو جائیے

جاوید صبا

MORE BYجاوید صبا

    بر طرف کر کے تکلف اک طرف ہو جائیے

    مستقل مل جائیے یا مستقل کھو جائیے

    کیا گلے شکوے کہ کس نے کس کی دل داری نہ کی

    فیصلہ کر ہی لیا ہے آپ نے تو جائیے

    میری پلکیں بھی بہت بوجھل ہیں گہری نیند سے

    رات کافی ہو چکی ہے آپ بھی سو جائیے

    آپ سے اب کیا چھپانا آپ کوئی غیر ہیں

    ہو چکا ہوں میں کسی کا آپ بھی ہو جائیے

    موت کی آغوش میں گریہ کناں ہے زندگی

    آئیے دو چار آنسو آپ بھی رو جائیے

    شاعری کار جنوں ہے آپ کے بس کی نہیں

    وقت پر بستر سے اٹھئے وقت پر سو جائیے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY