بے حرف و نوا سخن تو دیکھو

صہبا لکھنوی

بے حرف و نوا سخن تو دیکھو

صہبا لکھنوی

MORE BYصہبا لکھنوی

    بے حرف و نوا سخن تو دیکھو

    خوابوں کا ادھوراپن تو دیکھو

    لفظوں میں سمٹ سکا نہ پیکر

    انسان کا عجز فن تو دیکھو

    چہرے کے نقوش بولتے ہیں

    تصویر کا بانکپن تو دیکھو

    دامن کو بہار چھو گئی ہے

    جلتا ہوا پیرہن تو دیکھو

    جنگل کا سکوت کہہ رہا ہے

    شہروں میں بسی گھٹن تو دیکھو

    صدیوں سے لہو میں تر ہے دامن

    تاریخ کا پیرہن تو دیکھو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY