بھر جائیں گے جب زخم تو آؤں گا دوبارا

ثروت حسین

بھر جائیں گے جب زخم تو آؤں گا دوبارا

ثروت حسین

MORE BY ثروت حسین

    بھر جائیں گے جب زخم تو آؤں گا دوبارا

    میں ہار گیا جنگ مگر دل نہیں ہارا

    روشن ہے مری عمر کے تاریک چمن میں

    اس کنج ملاقات میں جو وقت گزارا

    اپنے لیے تجویز کی شمشیر برہنہ

    اور اس کے لیے شاخ سے اک پھول اتارا

    کچھ سیکھ لو لفظوں کو برتنے کا سلیقہ

    اس شغل میں گزرا ہے بہت وقت ہمارا

    لب کھولے پری زاد نے آہستہ سے ثروتؔ

    جوں گفتگو کرتا ہے ستارے سے ستارا

    مآخذ:

    • کتاب : Ghazal Calendar-2015 (Pg. 29.03.2015)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY