چاند تارے بنا کے کاغذ پر

عادل رضا منصوری

چاند تارے بنا کے کاغذ پر

عادل رضا منصوری

MORE BYعادل رضا منصوری

    چاند تارے بنا کے کاغذ پر

    خوش ہوئے گھر سجا کے کاغذ پر

    بستیاں کیوں تلاش کرتے ہیں

    لوگ جنگل اگا کے کاغذ پر

    جانے کیا ہم سے کہہ گیا موسم

    خشک پتا گرا کے کاغذ پر

    ہنستے ہنستے مٹا دیے اس نے

    شہر کتنے بسا کے کاغذ پر

    ہم نے چاہا کہ ہم بھی اڑ جائیں

    ایک چڑیا اڑا کے کاغذ پر

    لوگ ساحل تلاش کرتے ہیں

    ایک دریا بہا کے کاغذ پر

    ناؤ سورج کی دھوپ کا دریا

    تھم گئے کیسے آ کے کاغذ پر

    خواب بھی خواب ہو گئے عادلؔ

    شکل و صورت دکھا کے کاغذ پر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY