چاندنی میں رخ زیبا نہیں دیکھا جاتا

شکیل بدایونی

چاندنی میں رخ زیبا نہیں دیکھا جاتا

شکیل بدایونی

MORE BYشکیل بدایونی

    چاندنی میں رخ زیبا نہیں دیکھا جاتا

    ماہ و خورشید کو یکجا نہیں دیکھا جاتا

    یوں تو ان آنکھوں سے کیا کیا نہیں دیکھا جاتا

    ہاں مگر اپنا ہی جلوہ نہیں دیکھا جاتا

    دیدہ و دل کی تباہی مجھے منظور مگر

    ان کا اترا ہوا چہرہ نہیں دیکھا جاتا

    ضبط غم ہاں وہی اشکوں کا تلاطم اک بار

    اب تو سوکھا ہوا دریا نہیں دیکھا جاتا

    زندگی آ تجھے قاتل کے حوالے کر دوں

    مجھ سے اب خون تمنا نہیں دیکھا جاتا

    اب تو جھوٹی بھی تسلی بسر و چشم قبول

    دل کا رہ رہ کے تڑپنا نہیں دیکھا جاتا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    چاندنی میں رخ زیبا نہیں دیکھا جاتا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY