چمک رہی ہے پروں میں اڑان کی خوشبو

بشیر بدر

چمک رہی ہے پروں میں اڑان کی خوشبو

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    چمک رہی ہے پروں میں اڑان کی خوشبو

    بلا رہی ہے بہت آسمان کی خوشبو

    بھٹک رہی ہے پرانی دلائیاں اوڑھے

    حویلیوں میں مرے خاندان کی خوشبو

    سنا کے کوئی کہانی ہمیں سلاتی تھی

    دعاؤں جیسی بڑے پان دان کی خوشبو

    دبا تھا پھول کوئی میز پوش کے نیچے

    گرج رہی تھی بہت پیچوان کی خوشبو

    عجب وقار تھا سوکھے سنہرے بالوں میں

    اداسیوں کی چمک زرد لان کی خوشبو

    وہ عطر دان سا لہجہ مرے بزرگوں کا

    رچی بسی ہوئی اردو زبان کی خوشبو

    غزل کی شاخ پہ اک پھول کھلنے والا ہے

    بدن سے آنے لگی زعفران کی خوشبو

    عمارتوں کی بلندی پہ کوئی موسم کیا

    کہاں سے آ گئی کچے مکان کی خوشبو

    گلوں پہ لکھتی ہوئی لا الہ الا اللہ

    پہاڑیوں سے اترتی اذان کی خوشبو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY