درد ہے کہ نغمہ ہے فیصلہ کیا جائے

پیرزادہ قاسم

درد ہے کہ نغمہ ہے فیصلہ کیا جائے

پیرزادہ قاسم

MORE BYپیرزادہ قاسم

    درد ہے کہ نغمہ ہے فیصلہ کیا جائے

    یعنی دل کی دھڑکن پر غور کر لیا جائے

    آپ کتنے سادہ ہیں چاہتے ہیں بس اتنا

    ظلم کے اندھیرے کو رات کہہ دیا جائے

    آج سب ہیں بے قیمت گریہ بھی تبسم بھی

    دل میں ہنس لیا جائے دل میں رو لیا جائے

    بے حسی کی دنیا سے دو سوال میرے بھی

    کب تلک جیا جائے اور کیوں جیا جائے

    اب تو فقر و فاقہ کی آبرو اسی سے ہے

    تار تار دامن کو کیوں بھلا سیا جائے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY