دشت غربت میں اگر ساتھ تمہارا ہوتا

بشیر احمد شاد

دشت غربت میں اگر ساتھ تمہارا ہوتا

بشیر احمد شاد

MORE BYبشیر احمد شاد

    دشت غربت میں اگر ساتھ تمہارا ہوتا

    کیوں نہ صدیوں کا سفر ہم کو گوارا ہوتا

    اپنی تزئین سے کچھ وقت بچا کر جاناں

    میرے ماحول کی زلفوں کو سنوارا ہوتا

    اپنے مسند سے ذرا نیچے اتر کر تو نے

    ایک لمحہ ہی مرے ساتھ گزارا ہوتا

    رک نہ جاتا وہ کسی کوہ گراں کی مانند

    تو نے گر وقت کے دریا کو پکارا ہوتا

    میرے بے نور دریچوں میں ضیا کی خاطر

    کوئی جگنو کوئی سورج کوئی تارا ہوتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY