دیر لگی آنے میں تم کو شکر ہے پھر بھی آئے تو

عندلیب شادانی

دیر لگی آنے میں تم کو شکر ہے پھر بھی آئے تو

عندلیب شادانی

MORE BY عندلیب شادانی

    INTERESTING FACT

    اس غزل کے مطلع کو فلم وجےپتھ 1994 کے ایک گانے کے مکھڑے کے طور پر گایا گیا ہے

    دیر لگی آنے میں تم کو شکر ہے پھر بھی آئے تو

    آس نے دل کا ساتھ نہ چھوڑا ویسے ہم گھبرائے تو

    Am grateful you came finally, though you were delayed

    hope had not forsaken me, though must say was afraid

    شفق دھنک مہتاب گھٹائیں تارے نغمے بجلی پھول

    اس دامن میں کیا کیا کچھ ہے دامن ہاتھ میں آئے تو

    twilight, arc, moon, winds and stars, songs lightning flowers untold

    what all her vestment does contain if only I could hold

    چاہت کے بدلے میں ہم تو بیچ دیں اپنی مرضی تک

    کوئی ملے تو دل کا گاہک کوئی ہمیں اپنائے تو

    in exchange for love I'd trade my freedom I confess

    if a buyer could be found who would my heart possess

    کیوں یہ مہرانگیز تبسم مد نظر جب کچھ بھی نہیں

    ہائے کوئی انجان اگر اس دھوکے میں آ جائے تو

    if you harbour no intent, then why this sunlit glance

    what if some unknowning soul is led astray perchance

    سنی سنائی بات نہیں یہ اپنے اوپر بیتی ہے

    پھول نکلتے ہیں شعلوں سے چاہت آگ لگائے تو

    its not merely hearsay 'tis something I have seen

    flowers bloom in midst of flames, let love light the scene

    جھوٹ ہے سب تاریخ ہمیشہ اپنے کو دہراتی ہے

    اچھا میرا خواب جوانی تھوڑا سا دہرائے تو

    that history doth repeat itself has no shred of truth

    if it does so let it then return to me my youth

    نادانی اور مجبوری میں یارو کچھ تو فرق کرو

    اک بے بس انسان کرے کیا ٹوٹ کے دل آ جائے تو

    tween innocence and helplessness, distinction friends should make

    what should a helpless man do if, in love his heart should break

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عندلیب شادانی

    عندلیب شادانی

    RECITATIONS

    جگجیت سنگھ

    جگجیت سنگھ

    جگجیت سنگھ

    دیر لگی آنے میں تم کو شکر ہے پھر بھی آئے تو جگجیت سنگھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites