دیواروں سے مل کر رونا اچھا لگتا ہے

قیصر الجعفری

دیواروں سے مل کر رونا اچھا لگتا ہے

قیصر الجعفری

MORE BYقیصر الجعفری

    INTERESTING FACT

    فلم: ایک ہی مقصد ۱۹۸۸

    دیواروں سے مل کر رونا اچھا لگتا ہے

    ہم بھی پاگل ہو جائیں گے ایسا لگتا ہے

    کتنے دنوں کے پیاسے ہوں گے یارو سوچو تو

    شبنم کا قطرہ بھی جن کو دریا لگتا ہے

    آنکھوں کو بھی لے ڈوبا یہ دل کا پاگل پن

    آتے جاتے جو ملتا ہے تم سا لگتا ہے

    اس بستی میں کون ہمارے آنسو پونچھے گا

    جو ملتا ہے اس کا دامن بھیگا لگتا ہے

    دنیا بھر کی یادیں ہم سے ملنے آتی ہیں

    شام ڈھلے اس سونے گھر میں میلہ لگتا ہے

    کس کو پتھر ماروں قیصرؔ کون پرایا ہے

    شیش محل میں اک اک چہرا اپنا لگتا ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    انورادھا پوڈوال

    انورادھا پوڈوال

    منی بیگم

    منی بیگم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY