دل کی چوکھٹ پہ جو اک دیپ جلا رکھا ہے

وصی شاہ

دل کی چوکھٹ پہ جو اک دیپ جلا رکھا ہے

وصی شاہ

MORE BYوصی شاہ

    دل کی چوکھٹ پہ جو اک دیپ جلا رکھا ہے

    تیرے لوٹ آنے کا امکان سجا رکھا ہے

    سانس تک بھی نہیں لیتے ہیں تجھے سوچتے وقت

    ہم نے اس کام کو بھی کل پہ اٹھا رکھا ہے

    روٹھ جاتے ہو تو کچھ اور حسیں لگتے ہو

    ہم نے یہ سوچ کے ہی تم کو خفا رکھا ہے

    تم جسے روتا ہوا چھوڑ گئے تھے اک دن

    ہم نے اس شام کو سینے سے لگا رکھا ہے

    چین لینے نہیں دیتا یہ کسی طور مجھے

    تیری یادوں نے جو طوفان اٹھا رکھا ہے

    جانے والے نے کہا تھا کہ وہ لوٹے گا ضرور

    اک اسی آس پہ دروازہ کھلا رکھا ہے

    تیرے جانے سے جو اک دھول اٹھی تھی غم کی

    ہم نے اس دھول کو آنکھوں میں بسا رکھا ہے

    مجھ کو کل شام سے وہ یاد بہت آنے لگا

    دل نے مدت سے جو اک شخص بھلا رکھا ہے

    آخری بار جو آیا تھا مرے نام وصیؔ

    میں نے اس خط کو کلیجے سے لگا رکھا ہے

    RECITATIONS

    وصی شاہ

    وصی شاہ,

    وصی شاہ

    Dil ki chaukhat pe jo ik deep jala rakha hai وصی شاہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے