دل میں ہے کیا عذاب کہے تو پتہ چلے

آتش اندوری

دل میں ہے کیا عذاب کہے تو پتہ چلے

آتش اندوری

MORE BYآتش اندوری

    دل میں ہے کیا عذاب کہے تو پتہ چلے

    دیوار خاموشی کی ڈھے تو پتہ چلے

    سب کچھ ہی بانٹنے کو چلی آتی کیوں ندی

    اس کی طرح سے کوئی بہے تو پتہ چلے

    بیٹے تو جانتا نہیں ہے ماں کی اہمیت

    ماں کی طرح تو درد سہے تو پتہ چلے

    کیسے بتائے کوئی جیو کیسے زندگی

    تو پنچھیوں کے ساتھ رہے تو پتہ چلے

    پینے کو پانی بھی نہ ہو روٹی کی بات کیا

    نیتا جی بھوک تو یوں سہے تو پتہ چلے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY