دل ان کی محبت کا جو دیوانہ لگے ہے

عبدالرحمان خان وصفی بہرائچی

دل ان کی محبت کا جو دیوانہ لگے ہے

عبدالرحمان خان وصفی بہرائچی

MORE BYعبدالرحمان خان وصفی بہرائچی

    دل ان کی محبت کا جو دیوانہ لگے ہے

    یہ ایسی حقیقت ہے جو افسانہ لگے ہے

    عالم نہ کوئی پوچھے مری وحشت دل کا

    گھر اپنے اگر جاؤں تو ویرانہ لگے ہے

    بڑھتے نہیں کیوں میرے قدم آگے کی جانب

    نزدیک ہی شاید در جانانہ لگے ہے

    ویسے تو کسی نے مجھے ایسا نہیں جانا

    دیوانہ کہا تم نے تو دیوانہ لگے ہے

    روداد الم ان سے جو قاصد نے بیاں کی

    فرمانے لگے ہنس کے یہ افسانہ لگے ہے

    میں نے تو بنائی تھی فقط آپ کی تصویر

    دل میرا مگر آج صنم خانہ لگے ہے

    اب اپنا بھی بیگانہ نظر آتا ہے وصفیؔ

    بیگانہ تو بیگانہ ہے بیگانہ لگے ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY