دن کو بھی اتنا اندھیرا ہے مرے کمرے میں

ظفر گورکھپوری

دن کو بھی اتنا اندھیرا ہے مرے کمرے میں

ظفر گورکھپوری

MORE BYظفر گورکھپوری

    دن کو بھی اتنا اندھیرا ہے مرے کمرے میں

    سایہ آتے ہوئے ڈرتا ہے مرے کمرے میں

    غم تھکا ہارا مسافر ہے چلا جائے گا

    کچھ دنوں کے لیے ٹھہرا ہے مرے کمرے میں

    صبح تک دیکھنا افسانہ بنا ڈالے گا

    تجھ کو اک شخص نے دیکھا ہے مرے کمرے میں

    در بہ در دن کو بھٹکتا ہے تصور میرا

    ہاں مگر رات کو رہتا ہے مرے کمرے میں

    چور بیٹھا ہے کہاں سوچ رہا ہوں میں ظفرؔ

    کیا کوئی اور بھی کمرہ ہے مرے کمرے میں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY