دعا کی راکھ پہ مرمر کا عطرداں اس کا

افضال احمد سید

دعا کی راکھ پہ مرمر کا عطرداں اس کا

افضال احمد سید

MORE BYافضال احمد سید

    دعا کی راکھ پہ مرمر کا عطرداں اس کا

    گزیدگی کے لیے دست مہرباں اس کا

    گہن کے روز وہ داغی ہوئی جبیں اس کی

    شب شکست وہی جسم بے اماں اس کا

    کمند غیر میں سب اسپ و گوسفند اس کے

    نشیب خاک میں خفتہ ستارہ داں اس کا

    تنور یخ میں ٹھٹھرتے ہیں خواب و خوں اس کے

    لکھا ہے نام سر لوح رفتگاں اس کا

    چنی ہوئی ہیں تہہ خشت انگلیاں اس کی

    کھلا ہوا ہے پس ریگ بادباں اس کا

    وہ اک چراغ ہے دیوار خستگی پہ رکا

    ہوا ہو تیز تو ہر حال میں زیاں اس کا

    اسی سے دھوپ ہے انبار دھند ہے روپوش

    گرفت خواب سے برسر ہے کارواں اس کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY