دشمن کے طنز کو بھی سلیقے سے ٹال دے

معصوم شرقی

دشمن کے طنز کو بھی سلیقے سے ٹال دے

معصوم شرقی

MORE BY معصوم شرقی

    دشمن کے طنز کو بھی سلیقے سے ٹال دے

    اپنے مذاق طبع کی ایسی مثال دے

    بخشے بہار کو جو نہ شائستگی کا رنگ

    ایسی ہر ایک شے کو چمن سے نکال دے

    پچھلی رتوں کے داغ تو سب ماند پڑ گئے

    اب کے بہار زخم کوئی لا زوال دے

    میں بھی تو راہرو ہوں ترا رہ گزار شوق

    تھوڑی سی دھول میری طرف بھی اچھال دے

    معصومؔ صاف گوئی بڑی چیز ہے مگر

    ایسا نہ ہو کہیں یہ مصیبت میں ڈال دے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY