ڈوب کر پار اتر گئے ہیں ہم

نریش کمار شاد

ڈوب کر پار اتر گئے ہیں ہم

نریش کمار شاد

MORE BYنریش کمار شاد

    ڈوب کر پار اتر گئے ہیں ہم

    لوگ سمجھے کہ مر گئے ہیں ہم

    اے غم دہر تیرا کیا ہوگا

    یہ اگر سچ ہے مر گئے ہیں ہم

    خیر مقدم کیا حوادث نے

    زندگی میں جدھر گئے ہیں ہم

    یا بگڑ کر اجڑ گئے ہیں لوگ

    یا بگڑ کر سنور گئے ہیں ہم

    موت کو منہ دکھائیں کیا یا رب

    زندگی ہی میں مر گئے ہیں ہم

    ہائے کیا شے ہے نشۂ مے بھی

    فرش سے عرش پر گئے ہیں ہم

    آرزوؤں کی آگ میں جل کر

    اور بھی کچھ نکھر گئے ہیں ہم

    جب بھی ہم کو کیا گیا محبوس

    مثل نکہت بکھر گئے ہیں ہم

    شادمانی کے رنگ محلوں میں

    شادؔ با چشم تر گئے ہیں ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے