ایک مدت سے نہیں دیکھی ہے گھر کی صورت

ضیا فاروقی

ایک مدت سے نہیں دیکھی ہے گھر کی صورت

ضیا فاروقی

MORE BYضیا فاروقی

    ایک مدت سے نہیں دیکھی ہے گھر کی صورت

    گردشیں آج بھی لپٹی ہیں سفر کی صورت

    قفس جاں میں نہ روزن ہے نہ در کی صورت

    کیسے دیکھوں میں یہاں شمس و قمر کی صورت

    اب یہی جنگ کا عنوان بھی ہو سکتا ہے

    اس نے پتھر کوئی پھینکا ہے خبر کی صورت

    ماں کی آغوش سے پیوند زمیں ہونے تک

    آئینے ہم نے تراشے ہیں سفر کی صورت

    مکڑیاں اپنے ہی جالوں میں پھنسی بیٹھی ہیں

    ابھی کل تک تو نہ تھی یہ میرے گھر کی صورت

    روز اخبار اٹھاتے ہیں یہی سوچ کے ہم

    کوئی مژدہ نظر آئے تو خبر کی صورت

    ہم ضیاؔ سر کو بچائیں تو بچائیں کیسے

    اس کا ہر وار نمایاں ہے ہنر کی صورت

    مأخذ :
    • کتاب : Pas-e-Gard-e-Safar (Pg. 80)
    • Author : Zia Farooqui
    • مطبع : Educational Publishing House (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY