فراق میں خون دل ہیں پیتے شراب ہم لے کے کیا کریں گے

زیبا

فراق میں خون دل ہیں پیتے شراب ہم لے کے کیا کریں گے

زیبا

MORE BY زیبا

    فراق میں خون دل ہیں پیتے شراب ہم لے کے کیا کریں گے

    ہمارا دل آپ بھن رہا ہے کباب ہم لے کے کیا کریں گے

    جو ان سے کہتا ہوں یار حاضر ہے یہ ہمارا دل شکستہ

    تو ہنس کے کہتے ہیں ناز سے وہ جناب ہم لے کے کیا کریں گے

    نہیں ہے فرصت یہیں کے جھگڑوں سے فکر عقبیٰ کہاں کی واعظ

    عذاب دنیا ہے ہم کو کیا کم ثواب ہم لے کے کیا کریں گے

    سوال بے سود جانتے ہیں رہیں نہ خاموش تو کریں کیا

    عوض میں بوسہ کے تم سے صاحب جواب ہم لے کے کیا کریں گے

    یہ قول ہے رحمت خدا کا ڈرو نہ تم اے گناہ گارو

    شمار عصیاں اگر نہیں ہے حساب ہم لے کے کیا کریں گے

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY