گر دعا بھی کوئی چیز ہے تو دعا کے حوالے کیا

فرحت عباس شاہ

گر دعا بھی کوئی چیز ہے تو دعا کے حوالے کیا

فرحت عباس شاہ

MORE BY فرحت عباس شاہ

    گر دعا بھی کوئی چیز ہے تو دعا کے حوالے کیا

    جا تجھے آج سے ہم نے اپنے خدا کے حوالے کیا

    ایک مدت ہوئی ہم نے دنیا کی ہر ایک ضد چھوڑ دی

    ایک مدت ہوئی ہم نے دل کو وفا کے حوالے کیا

    اس طرح ہم نے تیری محبت زمانے کے ہاتھوں میں دی

    جس طرح گل نے خوشبو کو باد صبا کے حوالے کیا

    بے بسی سی عجب زندگی میں اک ایسی بھی آئی کہ جب

    ہم نے چپ چاپ ہاتھوں کو رسم حنا کے حوالے کیا

    خون نے تیری یادیں سلگتی ہوئی رات کو سونپ دیں

    آنسوؤں نے ترا درد روکھی ہوا کے حوالے کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY