گرچہ اے دل عاشق شیدا ہے تو

مصحفی غلام ہمدانی

گرچہ اے دل عاشق شیدا ہے تو

مصحفی غلام ہمدانی

MORE BYمصحفی غلام ہمدانی

    گرچہ اے دل عاشق شیدا ہے تو

    لیکن اپنے کام میں یکتا ہے تو

    عاشق و معشوق کرتا ہے جدا

    اے فلک یہ کام بھی کرتا ہے تو

    لاکھ پردے گر ہوں تیرے حسن پر

    کوئی پردوں میں چھپا رہتا ہے تو

    حال دل کہنے لگوں ہوں میں تو شوخ

    مجھ سے یوں کہتا ہے ''کیا بکتا ہے تو''

    پاس بیٹھا اس کے میں رویا کیا

    یوں نہ پوچھا مجھ سے ''کیوں روتا ہے تو''

    رات دن تو ہے مری آغوش میں

    میں ترا ساحل مرا دریا ہے تو

    بزم میں اس تند خو کی دوڑ دوڑ

    کام کیا؟ کیوں؟ کس لیے جاتا ہے تو

    واں نہیں مطلق ترا مذکور بھی

    مصحفیؔ کس بات پر بھولا ہے تو

    مآخذ
    • کتاب : kulliyat-e-mas.hafii(divan-e-doom) (Pg. 233)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY