گھر سے بے زار ہوں کالج میں طبیعت نہ لگے

فضیل جعفری

گھر سے بے زار ہوں کالج میں طبیعت نہ لگے

فضیل جعفری

MORE BYفضیل جعفری

    گھر سے بے زار ہوں کالج میں طبیعت نہ لگے

    اتنی اچھی بھی کسی شخص کی صورت نہ لگے

    ایک اک انچ پہ اس جسم کے ستر ستر

    بوسے لیجے تو بھلا کیوں وہ قیامت نہ لگے

    زہر میٹھا ہو تو پینے میں مزا آتا ہے

    بات سچ کہیے مگر یوں کہ حقیقت نہ لگے

    آئینہ عکس مرے ہاتھ تجلی غائب

    میرے دشمن کو بھی یارب مری عادت نہ لگے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY