aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

گناہ عشق میں اس بات کی تسکین ہوتی ہے

ڈاکٹر بھاؤنا شریواستو

گناہ عشق میں اس بات کی تسکین ہوتی ہے

ڈاکٹر بھاؤنا شریواستو

MORE BYڈاکٹر بھاؤنا شریواستو

    گناہ عشق میں اس بات کی تسکین ہوتی ہے

    ہوا ہو جرم گہرا تو سزا سنگین ہوتی ہے

    کھلے رکھتے ہو دروازے دریچے بارہا تم کیوں

    سنو دنیا تماشوں کی بڑی شوقین ہوتی ہے

    سفر میں دھوپ ہے تو کیا اداسی اوڑھ لو گے تم

    ملے سائے جو تھے ان کی بڑی توہین ہوتی ہے

    ذرا رو لو کہیں آنسو اگر یہ سوکھ جائیں تو

    نہیں ہیں زخم بھرتے اور زباں نمکین ہوتی ہے

    تمہارا لوٹ کے آنا ہماری خواہش بے جا

    مگر بھرتے ہیں جب بھی دم دم آمین ہوتی ہے

    سہارا بن نہیں پاتے بھلے خود غرض کچھ بچے

    مصیبت ہو مگر ان پہ تو ماں غمگین ہوتی ہے

    سیاست اور دولت جب سیاہی سوکھ لیتے ہیں

    کسی کے خون سے تصویر تب رنگین ہوتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے