ہم جوں چکور غش ہیں اجی ایک یار پر

رنگیں سعادت یار خاں

ہم جوں چکور غش ہیں اجی ایک یار پر

رنگیں سعادت یار خاں

MORE BYرنگیں سعادت یار خاں

    ہم جوں چکور غش ہیں اجی ایک یار پر

    بلبل کی طرح جی نہیں دیتے ہزار پر

    گر جی میں کچھ نہیں ہے تو دیکھے ہے کیوں مجھے

    انگلی کو پھیر پھیر کے تیغے کی دھار پر

    پا بوس یار کی ہمیں حسرت ہے اے نسیم

    آہستہ آئیو تو ہمارے مزار پر

    رخسار پر نمود ہوا خط خبر بھی ہے

    یعنی کمر کسی ہے خزاں نے بہار پر

    رنگیںؔ تو لے کے بیٹھے ہیں اسباب عیش سب

    آوے بشرط یار بھی اپنے قرار پر

    مأخذ :
    • کتاب : intekhaab-e-sukhan(avval) (Pg. 69)
    • Author : hasrat mohani
    • مطبع : uttar pardesh urdu acadmy

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY