ہر فلک بوس عمارت ہے انا کی تصویر (ردیف .. ن)

شہلا نقوی

ہر فلک بوس عمارت ہے انا کی تصویر (ردیف .. ن)

شہلا نقوی

MORE BYشہلا نقوی

    ہر فلک بوس عمارت ہے انا کی تصویر

    اور میں ٹوٹ کے گرتی ہوئی دیوار میں ہوں

    تم کو تنہائی کا احساس ہوا کیوں آخر

    میں تو مدت سے تمہارے در و دیوار میں ہوں

    شہر کے شہر پہ ہے نیند کا افسوں طاری

    میں ہوں خوش بخت کہ اک دیدۂ بے دار میں ہوں

    نہ سمندر نہ گھٹاؤں کی رہین منت

    بھیگتی اپنے ہی جذبات کی بوچھار میں ہوں

    ذہن اور جسم تو ہیں کار زیاں میں مصروف

    روح کے ساتھ میں اک حسرت دیدار میں ہوں

    اس کی آوارہ نگاہی کا گلا کیا شہلاؔ

    میں تو خود اپنے ہی اقرار میں انکار میں ہوں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY