اک دوجے کو دیر سے سمجھا دیر سے یاری کی

انجم سلیمی

اک دوجے کو دیر سے سمجھا دیر سے یاری کی

انجم سلیمی

MORE BYانجم سلیمی

    اک دوجے کو دیر سے سمجھا دیر سے یاری کی

    ہم دونوں نے ایک محبت باری باری کی

    خود پر ہنسنے والوں میں ہم خود بھی شامل تھے

    ہم نے بھی جی بھر کر اپنی دل آزاری کی

    اک آنسو نے دھو ڈالی ہے دل کی ساری میل

    ایک دیے نے کاٹ کے رکھ دی گہری تاریکی

    دل نے خود اصرار کیا اک ممکنہ ہجرت پر

    ہم نے اس مجبوری میں بھی خود مختاری کی

    چودہ برس کے ہجر کو امشب رخصت کرنا ہے

    سارا دن سو سو کر جاگنے کی تیاری کی

    ہم بھی اسی دنیا کے باسی تھے سو ہم نے بھی

    دنیا والوں سے تھوڑی سی دنیا داری کی

    انجمؔ ہم عشاق میں اونچا درجہ رکھتے ہیں

    بے شک عشق نے ایسی کوئی سند نہ جاری کی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جاوید نسیم

    جاوید نسیم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY