ان علم و آگہی کی کتابوں میں کچھ نہیں

بشیر احمد شاد

ان علم و آگہی کی کتابوں میں کچھ نہیں

بشیر احمد شاد

MORE BYبشیر احمد شاد

    ان علم و آگہی کی کتابوں میں کچھ نہیں

    کیا ڈھونڈھتا ہے یار نصابوں میں کچھ نہیں

    خوشبو کو ڈھونڈنے کی تمنا ہے کس لیے

    کچھ اور دیکھ سوکھے گلابوں میں کچھ نہیں

    جب اپنے پاس پیار کی صورت نہیں رہی

    چھوڑو خیال دوست کہ خوابوں میں کچھ نہیں

    وہ شہر مٹ چکا جو بسایا تھا پیار کا

    کیا ڈھونڈتے ہو یار خرابوں میں کچھ نہیں

    ہو آنکھ میں سرور تو کیا میکدے سے کام

    ساغر میں کچھ نہیں ہے شرابوں میں کچھ نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY