ان ظالموں کو جور سوا کام ہی نہیں

تاباں عبد الحی

ان ظالموں کو جور سوا کام ہی نہیں

تاباں عبد الحی

MORE BYتاباں عبد الحی

    ان ظالموں کو جور سوا کام ہی نہیں

    گویا کہ ان کے ظلم کا انجام ہی نہیں

    غم وصل میں ہے ہجر کا ہجراں میں وصل کا

    ہرگز کسی طرح مجھے آرام ہی نہیں

    کیا کیا خرابیاں میں ترے واسطے سہیں

    تس پر بھی چاہنے کا مرے نام ہی نہیں

    اب ہم دنوں کو اپنے نہ روئیں تو کیا کریں

    کرنے تھے جن میں عیش وے ایام ہی نہیں

    وے شخص جن سے فخر جہاں کو تھا اب وے ہائے

    ایسے گئے کہ ان کا کہیں نام ہی نہیں

    تم جو ہر اک کے دل کو ستاتے ہو کیا میاں

    آغاز کا جفا کے کچھ انجام ہی نہیں

    تاباںؔ بتا میں عجز کہاں تک کیا کروں

    جز ترک مہر یار کا پیغام ہی نہیں

    مأخذ :
    • Deewan-e-Taban Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY