عشق تو مشکل ہے اے دل کون کہتا سہل ہے

بہادر شاہ ظفر

عشق تو مشکل ہے اے دل کون کہتا سہل ہے

بہادر شاہ ظفر

MORE BYبہادر شاہ ظفر

    عشق تو مشکل ہے اے دل کون کہتا سہل ہے

    لیک نادانی سے اپنی تو نے سمجھا سہل ہے

    گر کھلے دل کی گرہ تجھ سے تو ہم جانیں تجھے

    اے صبا غنچے کا عقدہ کھول دینا سہل ہے

    ہمدمو دل کے لگانے میں کہو لگتا ہے کیا

    پر چھڑانا اس کا مشکل ہے لگانا سہل ہے

    گرچہ مشکل ہے بہت میرا علاج درد دل

    پر جو تو چاہے تو اے رشک مسیحا سہل ہے

    ہے بہت دشوار مرنا یہ سنا کرتے تھے ہم

    پر جدائی میں تری ہم نے جو دیکھا سہل ہے

    شمع نے جل کر جلایا بزم میں پروانے کو

    بن جلے اپنے جلانا کیا کسی کا سہل ہے

    عشق کا رستہ سراسر ہے دم شمشیر پر

    بوالہوس اس راہ میں رکھنا قدم کیا سہل ہے

    اے ظفرؔ کچھ ہو سکے تو فکر کر عقبیٰ کا تو

    کر نہ دنیا کا تردد کار دنیا سہل ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY