جب بھی بارش میری آنکھوں میں اتر جاتی ہے

خواجہ ساجد

جب بھی بارش میری آنکھوں میں اتر جاتی ہے

خواجہ ساجد

MORE BYخواجہ ساجد

    جب بھی بارش میری آنکھوں میں اتر جاتی ہے

    بادلوں میں تری تصویر ابھر جاتی ہے

    ڈوبنا جن ہمیں ہو مقصود وہ کب سوچتے ہیں

    موج کس سمت سے آتی ہے کدھر جاتی ہے

    میرے احساس کی بینائی ہے خوشبو اس کی

    آگ بن کر میری رگ رگ میں اتر جاتی ہے

    دن وہی دن ہے جو بیتے تری امید کے ساتھ

    شب وہی شب جو ترے ساتھ گزر جاتی ہے

    کیسی دیوار اٹھا دی مرے ہمسائے نے

    اب سدا آتی ہے کوئی نہ ادھر جاتی ہے

    اپنے اطراف اندھیروں کو بسائے رکھیے

    روشنی ان سے ذرا اور نکھر جاتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY