جب کسی نے حال پوچھا رو دیا

شاد عظیم آبادی

جب کسی نے حال پوچھا رو دیا

شاد عظیم آبادی

MORE BYشاد عظیم آبادی

    جب کسی نے حال پوچھا رو دیا

    چشم تر تو نے تو مجھ کو کھو دیا

    داغ ہو یا سوز ہو یا درد و غم

    لے لیا خوش ہو کے جس نے جو دیا

    اشک ریزی کے دھڑلے نے غبار

    جب ذرا بھی دل پہ دیکھا دھو دیا

    دل کی پروا تک نہیں اے بے خودی

    کیا کیا پھینکا کہاں کس کو دیا

    کچھ نہ کچھ اس انجمن میں حسب حال

    تو نے قسام ازل سب کو دیا

    کشت دنیا کیا خبر کیا پھل ملے

    تخم غم ہم نے تو آ کر بو دیا

    یہ بھی نشہ مے کشو کچھ کم نہیں

    دے نہ دے ساقی پہ تم سمجھو دیا

    شادؔ کے آگے بھلا کیا ذکر یار

    نام ادھر آیا کہ اس نے رو دیا

    زمرۂ اہل قلم میں لکھ کے نام

    خود کو ناحق شادؔ تو نے کھو دیا

    مآخذ
    • کتاب : Dewan-e-shad Azimabadi (Pg. 105)
    • Author : Shad Azimabadi
    • مطبع : Educational Publishing House (2005)
    • اشاعت : 2005

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY