جلوے ہوا کے دوش یہ کوئی گھٹا کے دیکھ

اظہر لکھنوی

جلوے ہوا کے دوش یہ کوئی گھٹا کے دیکھ

اظہر لکھنوی

MORE BY اظہر لکھنوی

    جلوے ہوا کے دوش یہ کوئی گھٹا کے دیکھ

    میخانے اڑتے پھرتے ہیں منظر فضا کے دیکھ

    کیوں شان حسن آئنہ خانے میں جا کے دیکھ

    اظہرؔ کو اپنے حسن کا مظہر بنا کے دیکھ

    محصور ہو گئی ہے تجلی نگاہ میں

    اب تو مری نگاہ سے دامن بچا کے دیکھ

    کیا جانے کس مقام یہ قسمت چمک اٹھے

    مایوس کیوں ہے دست طلب تو بڑھا کے دیکھ

    ذروں سے پھوٹ نکلے گی الفت کی روشنی

    یارو نہ ہو تو خاک میں دل کو ملا کے دیکھ

    صد رشک زندگی ہے حوادث کا آئنہ

    اظہرؔ اس آئنے میں ذرا مسکرا کے دیکھ

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY