جو گزری مجھ پہ مت اس سے کہو ہوا سو ہوا

محمد رفیع سودا

جو گزری مجھ پہ مت اس سے کہو ہوا سو ہوا

محمد رفیع سودا

MORE BYمحمد رفیع سودا

    جو گزری مجھ پہ مت اس سے کہو ہوا سو ہوا

    بلا کشان محبت پہ جو ہوا سو ہوا

    مبادا ہو کوئی ظالم ترا گریباں گیر

    مرے لہو کو تو دامن سے دھو ہوا سو ہوا

    پہنچ چکا ہے سر زخم دل تلک یارو

    کوئی سبو کوئی مرہم رکھو ہوا سو ہوا

    کہے ہے سن کے مری سرگزشت وہ بے رحم

    یہ کون ذکر ہے جانے بھی دو ہوا سو ہوا

    خدا کے واسطے آ درگزر گنہ سے مرے

    نہ ہوگا پھر کبھو اے تند خو ہوا سو ہوا

    یہ کون حال ہے احوال دل پہ اے آنکھو

    نہ پھوٹ پھوٹ کے اتنا بہو ہوا سو ہوا

    نہ کچھ ضرر ہوا شمشیر کا نہ ہاتھوں کا

    مرے ہی سر پہ اے جلاد جو ہوا سو ہوا

    دیا اسے دل و دیں اب یہ جان ہے سوداؔ

    پھر آگے دیکھیے جو ہو سو ہو ہوا سو ہوا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ٹینا ثانی

    ٹینا ثانی

    امانت علی خان

    امانت علی خان

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY