جو ہوا جیسا ہوا اچھا ہوا

عازم کوہلی

جو ہوا جیسا ہوا اچھا ہوا

عازم کوہلی

MORE BY عازم کوہلی

    جو ہوا جیسا ہوا اچھا ہوا

    جب جہاں جو ہو گیا اچھا ہوا

    دکھ پہ میرے رو رہا تھا جو بہت

    جاتے جاتے کہہ گیا اچھا ہوا

    بات تھی پردے کی پردے میں رہی

    ٹل گیا اک حادثہ اچھا ہوا

    میری بگڑی داستاں میں دوستو

    ذکر ان کا جب ہوا اچھا ہوا

    اٹھتے اٹھتے ان کی نظریں جھک گئیں

    تم پہ عازمؔ تبصرہ اچھا ہوا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY