aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کب غیر ہوا محو تری جلوہ گری کا

امداد امام اثر

کب غیر ہوا محو تری جلوہ گری کا

امداد امام اثر

MORE BYامداد امام اثر

    کب غیر ہوا محو تری جلوہ گری کا

    تو پوچھ مرے دل سے مزہ بے خبری کا

    سودا جو گل و لالہ کو ہے جیب دری کا

    ادنیٰ یہ شگوفہ ہے نسیم سحری کا

    کس نے لب بام آ کے دکھایا رخ روشن

    خورشید میں ہے رنگ چراغ سحری کا

    اپنی یہ غزل ہے کہ پرستان سخن ہے

    پرواز مضامیں میں ہے انداز پری کا

    کچھ کم نہیں نازک مرے مضمون کمر سے

    شہرہ ہے بجا یار کی نازک کمری کا

    اک رات بھی اے ماہ نہ جاگی مری قسمت

    سنتا تھا بہت شور دعائے سحری کا

    جس نے مجھے آگاہ کیا حال جہاں سے

    کیا لطف جمادات کو ہے بے خبری کا

    غربت میں ملا لطف کہیں بڑھ کے وطن سے

    حاصل جو ہوا تجھ سے مزا ہم سفری کا

    اس ماہ کی محفل میں جو ہے قہقہہ زن آج

    ہوتا ہے بط مے پہ گماں کبک دری کا

    قرآن کہے دیتا ہے کہ ہم حق کی زباں ہیں

    ہوتا ہے جدا طور کلام بشری کا

    آدم کی تو ماں بھی نہ تھی اے منکر اعجاز

    عیسیٰ کو ملا صرف شرف بے پدری کا

    سرو قد دلبر کی جو تصویر ہے دل پر

    ہم سنگ نہیں لعل عقیق شجری کا

    آنکھیں ہیں حسینوں کی ترے سبزۂ رخ پر

    کیونکہ نہ ہو میلان غزالوں کو چری کا

    چل تو بھی اثرؔ لے کے متاع دل بے تاب

    وہ دیکھنے جاتے ہیں تماشا گزری کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے