کب تم بھٹکے کیوں تم بھٹکے کس کس کو سمجھاؤ گے

جمیل الدین عالی

کب تم بھٹکے کیوں تم بھٹکے کس کس کو سمجھاؤ گے

جمیل الدین عالی

MORE BYجمیل الدین عالی

    کب تم بھٹکے کیوں تم بھٹکے کس کس کو سمجھاؤ گے

    اتنی دور تو آ پہنچے ہو اور کہاں تک جاؤ گے

    اس چالیس برس میں تم نے کتنے دوست بنائے ہیں

    اب جو عمر بچی ہے اس میں کتنے دوست بناؤ گے

    بچپن کے سب سنگی ساتھی آخر کیوں تمہیں چھوڑ گئے

    کوئی یار نیا پوچھے تو اس کو کیا بتلاؤ گے

    جو بھی تم نے شہرت پائی جو بھی تم بدنام ہوئے

    کیا یہی ترکہ اپنے پیارے بچوں کو دے جاؤ گے

    اب اس جوش خود آگاہی میں آگے کی کیا سوچی ہے

    شعر کہو گے عشق کرو گے کیا کیا ڈھونگ رچاؤ گے

    عالؔی کس کو فرصت ہوگی ایک تمہی کو رونے کی

    جیسے سب یاد آ جاتے ہیں تم بھی یاد آ جاؤ گے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY