کہا جب تم سے چارہ درد دل کا ہو نہیں سکتا

حسن بریلوی

کہا جب تم سے چارہ درد دل کا ہو نہیں سکتا

حسن بریلوی

MORE BYحسن بریلوی

    کہا جب تم سے چارہ درد دل کا ہو نہیں سکتا

    تو جھنجھلا کر کہا تیرا کلیجا ہو نہیں سکتا

    وہ اپنی ضد کے پورے ہٹ کے پورے آن کے پورے

    فقط اتنی کمی ہے قول پورا ہو نہیں سکتا

    کہاں کی چارہ فرمائی عیادت تک نہیں کرتے

    مسیحائی پہ مرتے ہیں اور اتنا ہو نہیں سکتا

    سر طور ان کے جلوے نے پکارا خود نما ہو کر

    کہ اپنے چاہنے والے سے پردا ہو نہیں سکتا

    کہا جب ان سے میری زندگی تم ہو کہا ہنس کر

    میں سمجھا اب تمہیں میرا بھروسا ہو نہیں سکتا

    مرا گھر غیر کا گھر تو نہیں کیوں کر وہ کھل کھیلیں

    نگاہیں اٹھ نہیں سکتیں اشارا ہو نہیں سکتا

    شرفؔ اور رشکؔ کے کہنے سے کچھ تک بندیاں کر لیں

    حسنؔ افکار میں ہم سے دو غزلا ہو نہیں سکتا

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 130)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY