کون سی بات تری ہم سے اٹھائی نہ گئی

مرزا جواں بخت جہاں دار

کون سی بات تری ہم سے اٹھائی نہ گئی

مرزا جواں بخت جہاں دار

MORE BYمرزا جواں بخت جہاں دار

    کون سی بات تری ہم سے اٹھائی نہ گئی

    پر جفا جو تری یہ نت کی لڑائی نہ گئی

    نہ کہا تھا کہ تو قاتل ہو مرا میں مقتول

    سر نوشت اپنی کسی ہی سے مٹائی نہ گئی

    قصد ہر چند کیا سیکھنے کا بلبل نے

    وضع نالے کی مری اس سے اڑائی نہ گئی

    دل سوزاں کی جہاں دارؔ ترے تا بہ فلک

    کون سی آہ تھی جو مثل ہوائی نہ گئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے