خود اپنے دل میں خراشیں اتارنا ہوں گی

محسن نقوی

خود اپنے دل میں خراشیں اتارنا ہوں گی

محسن نقوی

MORE BYمحسن نقوی

    خود اپنے دل میں خراشیں اتارنا ہوں گی

    ابھی تو جاگ کے راتیں گزارنا ہوں گی

    ترے لیے مجھے ہنس ہنس کے بولنا ہوگا

    مرے لیے تجھے زلفیں سنوارنا ہوں گی

    تری صدا سے تجھی کو تراشنا ہوگا

    ہوا کی چاپ سے شکلیں ابھارنا ہوں گی

    ابھی تو تیری طبیعت کو جیتنے کے لیے

    دل و نگاہ کی شرطیں بھی ہارنا ہوں گی

    ترے وصال کی خواہش کے تیز رنگوں سے

    ترے فراق کی صبحیں نکھارنا ہوں گی

    یہ شاعری یہ کتابیں یہ آیتیں دل کی

    نشانیاں یہ سبھی تجھ پہ وارنا ہوں گی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    خود اپنے دل میں خراشیں اتارنا ہوں گی نعمان شوق

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY