خود کے احساس محبت نے مجھے زندہ رکھا

ارملا مادھو

خود کے احساس محبت نے مجھے زندہ رکھا

ارملا مادھو

MORE BYارملا مادھو

    خود کے احساس محبت نے مجھے زندہ رکھا

    میرے کچھ نیک خیالات نے تابندہ رکھا

    مجھ کو مشکل ہی گزرتی ہے شناسائی سے

    کیونکہ اے دوستو تم نے مجھے شرمندہ رکھا

    سہل دل ہوں تو مجھے آپ ہی چلنا ہے محض

    اپنے معیار کو سو خود سے ہی پائندہ رکھا

    دل لگی کرتی رہی خاک محبت مجھ سے

    زندگی میں نے تجھے ریت کا باشندہ رکھا

    کتنے رنگوں سے مری سانس کے کس بل تولے

    پھر بھی جی بھٹکے نہیں دھیان یہ آئندہ رکھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY