خود سوال آپ ہی جواب ہوں میں

عابد مناوری

خود سوال آپ ہی جواب ہوں میں

عابد مناوری

MORE BYعابد مناوری

    خود سوال آپ ہی جواب ہوں میں

    زندگی کی کھلی کتاب ہوں میں

    یوں تو اک جرعۂ شراب ہوں میں

    گردش وقت کا جواب ہوں میں

    جستجوئے سکون دل تھی مجھے

    غرق دریائے اضطراب ہوں میں

    میری قیمت ہے پیار کے دو بول

    کتنے سستے میں دستیاب ہوں میں

    کبھی نغمہ طراز تھا میں بھی

    آج ٹوٹا ہوا رباب ہوں میں

    رنج غم درد بے کسی حسرت

    میرؔ کا جیسے انتخاب ہوں میں

    کون مجھ پر یقین لائے گا

    اپنی نظروں میں خود سراب ہوں میں

    پہلے سیلاب سے پریشاں تھا

    اب کہ محو تلاش آب ہوں میں

    مختلف رنگ ہیں مرے عابدؔ

    کبھی جلوہ کبھی حجاب ہوں میں

    مآخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY