خوش ہیں بہت مزاج زمانہ بدل کے ہم

محشر عنایتی

خوش ہیں بہت مزاج زمانہ بدل کے ہم

محشر عنایتی

MORE BYمحشر عنایتی

    خوش ہیں بہت مزاج زمانہ بدل کے ہم

    لیکن یہ شعر کس کو سنائیں غزل کے ہم

    اے مصلحت چلیں بھی کہاں تک سنبھل کے ہم

    انداز کہہ رہے ہیں کہ انساں ہیں کل کے ہم

    شاید عروس زیست کا گھونگھٹ الٹ گیا

    اب ڈھونڈنے لگے ہیں سہارے اجل کے ہم

    بدلیں ذرا نگاہ کے انداز آپ بھی

    اٹھے ہیں کچھ اصول وفا کے بدل کے ہم

    جیسے تھکا تھکا کوئی گم کردہ کارواں

    اٹھتے ہیں بیٹھ جاتے ہیں کچھ دور چل کے ہم

    ہنسنا تو درکنار ہے رو بھی نہیں سکے

    محشرؔ چلے ہیں کس کی گلی سے نکل کے ہم

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    خوش ہیں بہت مزاج زمانہ بدل کے ہم فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY