خوشی بھی کس نے کہا وجہ غم نہیں ہوتی

جہانزیب ساحر

خوشی بھی کس نے کہا وجہ غم نہیں ہوتی

جہانزیب ساحر

MORE BYجہانزیب ساحر

    خوشی بھی کس نے کہا وجہ غم نہیں ہوتی

    بتا وہ شام جو شام الم نہیں ہوتی

    ہم اس جگہ پہ کرائے کے گھر میں رہتے ہیں

    ہماری رائے کبھی محترم نہیں ہوتی

    ترے خیال کے آتے ہی لوٹنے سے لگا

    ہر ایک چیز اداسی میں ضم نہیں ہوتی

    جھکے ہوئے ہیں یہ سر تو کسی مصیبت میں

    یہ اک فقیر کی گردن ہے خم نہیں ہوتی

    جو تیرے ساتھ محبت تھی مر گئی ہے وہ

    مگر جو تجھ سے عقیدت ہے کم نہیں ہوتی

    میں اپنے دکھ میں برابر شریک ہوں لیکن

    بس ایک مسئلہ ہے آنکھ نم نہیں ہوتی

    بتا رہی ہیں پرندوں کی ہجرتیں ساحرؔ

    کوئی تباہی کبھی ایک دم نہیں ہوتی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY