خشک دامن پہ برسنے نہیں دیتی مجھ کو

رضا مورانوی

خشک دامن پہ برسنے نہیں دیتی مجھ کو

رضا مورانوی

MORE BYرضا مورانوی

    خشک دامن پہ برسنے نہیں دیتی مجھ کو

    میری غیرت کبھی رونے نہیں دیتی مجھ کو

    ایک خواہش ہے جو مدت سے گلا گھونٹے ہے

    اک تمنا ہے جو مرنے نہیں دیتی مجھ کو

    زندگی روز نیا درد سناتی ہے مگر

    اپنے آنسو کبھی چھونے نہیں دیتی مجھ کو

    دل تو احباب سے ملنے کو بہت چاہتا ہے

    مفلسی گھر سے نکلنے نہیں دیتی مجھ کو

    کچھ تو کانوں کو ستاتا ہے یہ تنہائی کا شور

    کچھ مری خامشی سونے نہیں دیتی مجھ کو

    فکر غربت کی مرے پیچھے پڑی ہو جیسے

    چین سے لقمہ نگلنے نہیں دیتی مجھ کو

    لے تو آتی ہے ضرورت مجھے بازاروں تک

    اک انا ہے کہ جو بکنے نہیں دیتی مجھ کو

    اتنا احسان تو کرتی ہے رضاؔ مجھ پہ حیات

    ٹوٹ جاؤں تو بکھرنے نہیں دیتی مجھ کو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY