کسی کی یاد میں پلکیں ذرا بھگو لیتے

بشیر بدر

کسی کی یاد میں پلکیں ذرا بھگو لیتے

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    کسی کی یاد میں پلکیں ذرا بھگو لیتے

    اداس رات کی تنہائیوں میں رو لیتے

    دکھوں کا بوجھ اکیلے نہیں سنبھلتا ہے

    کہیں وہ ملتا تو اس سے لپٹ کے رو لیتے

    اگر سفر میں ہمارا بھی ہم سفر ہوتا

    بڑی خوشی سے انہی پتھروں پہ سو لیتے

    تمہاری راہ میں شاخوں پہ پھول سوکھ گئے

    کبھی ہوا کی طرح اس طرف بھی ہو لیتے

    یہ کیا کہ روز وہی چاندنی کا بستر ہو

    کبھی تو دھوپ کی چادر بچھا کے سو لیتے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کسی کی یاد میں پلکیں ذرا بھگو لیتے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY