کسی کو خار کسی سانس کو ببول کیا

نبیل احمد نبیل

کسی کو خار کسی سانس کو ببول کیا

نبیل احمد نبیل

MORE BYنبیل احمد نبیل

    کسی کو خار کسی سانس کو ببول کیا

    جو ہم نے کار محبت کیا فضول کیا

    ہمیشہ خاک اڑائی ہے راستوں نے مری

    اس انتظار کی شدت نے مجھ کو دھول کیا

    سجا کے رکھ دیا کانٹا بھی میرے پہلو میں

    کسی بہار نے مجھ کو کبھی جو پھول کیا

    رہ حیات میں آسائشوں کو ٹھکرا کر

    تمہارے درد کو میں نے سدا قبول کیا

    ہمیشہ پھولوں کو بدلا ہے خار و خس میں نبیلؔ

    کسی بھی خار کو لیکن کبھی نہ پھول کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY