کچھ طور نہیں بچنے کا زنہار ہمارا

عبدالرحمان احسان دہلوی

کچھ طور نہیں بچنے کا زنہار ہمارا

عبدالرحمان احسان دہلوی

MORE BY عبدالرحمان احسان دہلوی

    کچھ طور نہیں بچنے کا زنہار ہمارا

    جی لے ہی کے جاوے گا یہ آزار ہمارا

    کوچہ سے ترے کوچ ہے اے یار ہمارا

    جی لے ہی چلی حسرت دیدار ہمارا

    تو ہم کو اٹھا لیجیو اس وقت الٰہی

    جس وقت اٹھے پہلو سے دل دار ہمارا

    یارا ہے کہاں اتنا کہ اس یار کو یارو

    میں یہ کہوں اے یار ہے تو یار ہمارا

    ہم پادشہ مملکت عشق ہیں ناحق

    منصور سا مارا گیا سردار ہمارا

    کہہ دیجیو مکھولی کو اے گردش طالع

    ہاں جلدی سے لا تخت ہوا دار ہمارا

    ابرو کی تری بیت کی کیا بات ولیکن

    ہے آہ کا مصرعہ بھی دھواں دار ہمارا

    احساںؔ تو غزل فارسی ہی اپنی کہا کر

    دل ریختہ تیرے سے ہے بیزار ہمارا

    مآخذ:

    Kulliyat-e-Ehsan
    • Kulliyat-e-Ehsan

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites